Saudi Arabia's horror film Junoon to be officially released on 27 Oct

ریاض:(اے یو ایس) ڈائریکٹرز معن اور یاسر کی سعودی خوفناک فلم جنون جمعرات 27 اکتوبر کو سعودی سینما گھروں میں ریلیز کردی جائے گی۔ مختلف فلمی میلوں میں پیش کئے جانے اور بہت سی داد وصول کرنے کے بعد پہلی مرتبہ فلم کو عوامی شو کے طور پر پیش کیا جارہا ہے۔فلم “جنون” کے واقعات نوجوان سعودی مردوں اور خواتین کے ایک گروپ کے گرد گھومتے ہیں جو یوٹیوب کے ذریعے شہرت کی تلاش میں رہتے ہیں اور ایسے واقعات اور مہم جوئی میں ملوث ہو جاتے ہیں جو ان کی زندگی کو خطرے میں ڈال دیتے ہیں۔ اس فلم کو سعودی عرب اور امریکہ میں فلمایا گیا تھا۔مختلف فلمی میلوں کے سفر میں فلم جنون نے فیٹن حمامہ فلم فیسٹیول میں بہترین فیچر فلم اور بہترین سنیماٹوگرافی کا ایوارڈ جیتا۔ فرانس میں نائس انٹرنیشنل فلم فیسٹیول میں بہترین ایڈیٹنگ کا ایوارڈ اپنے نام کیا۔ فلم جنون نے مالمو عرب فلم فیسٹیول، ریڈ سی انٹرنیشنل اور سعودی فلم فیسٹیول میں شرکت کا اعزاز حاصل کیا۔

عظیم فلمی نقاد ابراہیم العریس نے مالمو عرب فلم فیسٹیول میں اپنے انٹرویو میں کہا تھا کہ فلم میں ایک پاگل پن جس نے مجھے ایک پرلطف لیکن جاندار سنیما کی زبان میں پکڑ لیا، یہ ایک ایسا انداز ہے جو امریکی میوزک چینل ایم ٹی وی سے منسلک ہے۔ یہ اینیمیٹڈ یوتھ ویڈیو کلپ کا ایک منفرد ڈائنامک میں فلمایا گیا ہے جو مکالموں اور پیش کاری کو بہتر بناتا ہے۔ اس طرح کی فلم سعودی سینما میں ایک نئے انداز کے لیے منفرد ماڈل ہو سکتی ہے۔فلمی نقاد ہووک ہباشین نے اس فلم کے بارے میں لکھا ہے کہ یہ ایک جنونی فلم ہے جو انہیں فلموں کا تسلسل ہے جس میں عجب و غریب مظاہر، جنات اور آباد جگہیں دکھائی جاتی ہیں۔ یہ ایسی فلمیں ہوتی ہیں جن میں مالک حقیقت سے بہت دور ہوتا ہے مگر ظاہر کرتا ہے یہ سب چیزیں حقیقت کے متوازی ہیں۔

یہاں جو فرق ہے وہ مضحکہ خیز احساس بھی ہے کیونکہ ان چیزوں کو سنجیدگی پر محمول نہیں کیا جاسکتا۔ناقد احمد شوقی نے لکھا ہے کہ جنون ایک حقیقی اور نہایت عمدگی سے بنائی گئی ایک ایسی فلم ہے جسے دیکھنے والے کی سانسیں تھم جائیں ۔ جس میں پہلی مرتبہ عرب سنیما نے فاو¿نڈ فوٹیج فلموں کے معیار کو استعمال کرنے میں سبقت حاصل کی ہے۔ اس فلم میں ایک ایسی کہانی بیان کی گئی ہے جو نہ صرف دلچسپ ہے بلکہ اس کے ساتھ ساتھ اس میں غور و فکر کے لائق نقطہ نظر بھی پیش کیا گیا ہے۔فلم میں معن بن عبد الرحمن، آیدا القصبی، سمیہ رضا، نوان ریبیرو، صالح عالم اور خیریہ نظمی نے اداکاری کی ہے۔ ایگزیکٹو پروڈیوسر نوان ریبیرو، معن بن عبدالرحمن اور عمرو بن عبدالرحمن ہیں۔ پروڈیوسر ایڈوائزر طلحہ بن عبدالرحمن ہیں۔ لائن پروڈیوسر خالد القرینیس ہیں۔ شریک پروڈیوسر المعتز الجفری اور عبداللہ حامد ہیں، کہانی لکھنے والے پیڈرو پاو¿لو اراو¿جو اور مروان مقبل ہیں۔ فلم کی ہدایت کاری معن بن عبدالرحمٰن اور یاسر بن عبدالرحمٰن نے کی ہے۔