Morbi bridge collapse: Gujarat police arrest nine after disaster

احمد آباد :(اے یوایس ) گجرات کے موربی ضلع میں مچھو ندی پر بنا تقریبا 143 سال پرانا پل گرنے سے بڑا حادثہ پیش آیا۔ اس حادثہ میں ابھی تک141 افراد کی موت ہوچکی ہے۔ اندیشہ ظاہر کیا جارہا ہے کہ مہلوکین کی تعداد مزید بڑھ سکتی ہے۔ وہیں اس حادثہ کو لے کر انتظامیہ نے کارروائی کرتے ہوئے اوریوا کمپنی کے 9افراد کو گرفتار کیا ہے، جن میں دو کنٹریکٹر شامل ہیں۔ واضح ہو کہ گرفتاری سے پہلے ان سبھی9 لوگوں کو حراست میں لیا گیا تھا۔

وہیں اتوار کو ہی انتظامیہ نے لاپروائی کی وجہ سے ہوئے حادثہ کو لے کر معاملہ درج کرلیا تھا۔گرفتار کئے گئے ملزمین میں اوریوا کے دو مینیجر، دو ٹکٹ کلرک، تین سیکورٹی گارڈ اور دو ریپیئرنگ کنٹریکٹر شامل ہیں۔ بتادیں کہ ان نو ملزمین کو پکڑنے کیلئے گجرات اے ٹی ایس ، ریاستی خفیہ محکمہ اور موربی پولیس نے جگہ جگہ چھاپہ ماری کی تھی۔ چھاپہ ماری کے بعد انہیں حراست میں لیا گیا تھا۔ سبھی 9 ملزمین اوریوا کمپنی کے ملازمین ہیں۔ سبھی ملزمین کو دفعہ 304، دفعہ 114، دفعہ 308 کے تحت حراست میں لیا گیا تھا۔

واضح ہو کہ گرفتاری سے پہلے پولیس نے گجرات کے موربی شہر میں کیبل پل کی دیکھ بھال اور آپریشن کا کام دیکھنے والی ایجنسیوں کے خلاف غیر ارادتا قتل کے الزام میں معاملہ درج کیا تھا۔ موربی میونسپلٹی کے چیف افسر سندیپ سنگھ جالا نے اتوار کو نامہ نگاروں سے کہا تھا کہ شہر میں گھڑیاں اور ای بائیک مینوفیکچرر اوریوا گروپ کو پل کی تجدید کاری اور اس کی مرمت کا ٹھیکہ دیا گیا تھا۔موربی کے ایس پی راہل ترپاٹھی نے کہا تھا کہ اتوار رات کیس درج ہونے کے بعد کچھ لوگوں کو ابتدائی پوچھ گچھ کے لیے بلایا گیا تھا۔