Pakistan PM Sharif meets Chinese President Xi; both agree to strengthen all-weather ties, CPEC

بیجنگ:(اے یوا یس ) پاکستان کے وزیر اعظم شہباز شریف اور چین کے صدر شی جن پینگ مختلف شعبوں بشمول سی پیک اور اسٹریٹجک پارٹنر شپ میں کثیر المقاصد تعاون کو مستحکم کرنے پر متفق ہو گئے ۔چینی ہم منصب کی دعوت پر چین جانے والے وزیراعظم شہباز شریف نے ،جن کا وزارت عظمیٰ سنبھالنے کے بعد پہلا دورہ چین ہے اور جن کے ہمراہ وفاقی کابینہ کے ارکان بھی ہیں، چینی صدر شی جن پینگ سے مختلف مور پر تبادلہ خیال کیا جس میں دونوں رہنما ؤں نے اپنے سدا بہار تعلقات اور60ارب امریکی ڈالر کی مالیت کی چین پاکستان اقتصادی راہداری(سی پیک) کو استحکام بخشنے پر اتفاق کیا۔

دورے کے دوران دونوں ممالک کے قائدین نے اسٹریٹجک کوآپریشن پارٹنر شپ کا جائزہ بھی لیا۔ اس دورے سے دونوں ممالک کے درمیان وسیع تر دو طرفہ تعاون کے ایجنڈے پر پیش رفت اور چین پاکستان اقتصادی راہداری کی رفتار مزید بڑھنے کی توقع ہے۔ وزیر اعظم کے بیجنگ پرواز کرنے سے قبل دورہ چین سے متعلق وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ وزیر اعظم کا دورہ 2013 میں نواز شریف کے وژن کی کڑی ہوگی، پچھلے 4 برسوں میں سی پیک تاخیر کا شکار ہوا، سی پیک کے حوالے سے پچھلے ہفتے ایک میٹنگ ہوئی ہے، یہ دورہ سی پیک اور ایک نئی منزل کے لیے اہم کردار ادا کریگا۔

وزیر اطلاعات نے مزید کہا کہ وزیر اعظم کے دورے کے دوران سی پیک کے حوالے سے معاہدوں پر دستخط بھی ہوں گے۔واضح ہو کہ وزیر اعظم بننے کے بعد شہباز کا یہ پہلا دورہ چین ضرور ہے لیکن صدر شی جن پینگ سے ان کی یہ دوسری ملاقات ے۔ پہلی ملاقات ازبکستان کے شہر سمر قند میں شنگھائی تعاون تنظیم (ایس سی او) اجلاس میں ہوئی تھی۔