At anti-terror conference, PM Modi's indirect swipe at Pak

نئی دہلی:وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا ہے کہ ہم نے دہشت گردی کے باعث ہزاروں قیمتی جانیں گنوائی ہیں لیکن ہم نے دہشت گردی سے بڑی بہادری سے مقابلہ کیا اور ہم اس وقت تک چین سے نہیں بیٹھیں گے جب تک کہ دہشت گردی کے عفریت کا سر نہ کچل دیں ۔

انہوں نے واضح طور پر پاکستان اور چین کے حوالے سے دہشت گردی کو تقویت دینے اور ان کی حمایت کرنے والے ممالک پر تنقید کی۔ دہشت گردی کے لیے کوئی پیسہ نہیں کے عنوان سے منعقد کانفرنس میں شرکت کرنے والے 70 ممالک کے مندوبین سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم مودی نے کہا کہ دہشت گردی کی حمایت کرنے والے ممالک پر اور دہشت گردوں کے لیے ہمدردی پیدا کرنے کی کوشش کرنے والی تنظیموں اور افراد پر بھی جرمانہ کے طور پر الگ تھلگ کر دیا جا نا چاہیے۔ نے ہزاروں قیمتی جانیں گنوائیں لیکن ہم نے دہشت گردی کا بہادری سے مقابلہ کیا ہے۔ ہم دہشت گردی سے نمٹنے میں ثابت قدم ہیں۔ ہم سمجھتے ہیں کہ ایک حملہ بھی بہت زیادہ ہے۔

وزیر اعظم نے زور دیتے ہوئے کہا کہ یکساں صفر برداشت نقطہ نظر اپنایا جائے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ دہشت گردی کی مالی معاونت اور دہشت گردوں کی بھرتی کے لیے نئی قسم کی ٹیکنالوجی کا استعمال کیا جا رہا ہے۔ نئی فنانس ٹیکنالوجیز کے لیے یکساں فہم و ادراک کی ضرورت ہے۔ بعض اوقات منی لانڈرنگ اور مالی جرائم جیسی سرگرمیاں بھی دہشت گردی کی مالی معاونت کے طور پر جانی جاتی ہیں۔ وزیر اعظم مودی نے مزید کہا کہ اس پیچیدہ ماحول میں اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل (یو این ایس سی)اور فنانشل ایکشن ٹاسک فورس (ایف اے ٹی ایف) دہشت گردی کے خلاف جنگ میں مدد کر رہے ہیں۔