Iranian Supreme Leader's niece 'arrested' after praising ex-royalty

تہران:(اے یو ایس ) ایران میں ستمبر سے نوجوان خاتون مہسا امینی کے قتل کے بعد سے شروع ہونے والی تحریک کے بعد سے احتجاجی مظاہرے جاری ہیں۔ سماجی کارکن فریدہ مرادخانی کے بھائی محمود مرادخانی نے اعلان کیا ہے کہ رہبر اعلیٰ علی خامنہ ای کی بھانجی کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔انہوں نے گذشتہ شام ایک مختصر ٹویٹ میں بتایا کہ ان کی بہن فریدہ مراد خانی کو گرفتار کر کے جیل لے جایا گیا اور تہران کی ایون عدالت میں پیشی کے بعد قید کر دیا گیا، انہوں نے مزید کوئی تفصیلات سے آگاہ نہیں کیا۔دوسری طرف احتجاجی کارکنوں کا کہنا ہے کہ کسی بھی مخالف آواز کی تناؤ اور اضطراب نے ملک میں اتھارٹی کو پریشان کرنا شروع کر دیا ہے۔ دیگر افراد کا کہنا ہے کہ علی خامنہ ای کی بھانجی کو اپنی ماں پر دباؤ ڈالنے اور ماں کو اپنے بھائی (خامنہ ای ) کے بارے میں جو کچھ معلوم ہے اسے ظاہر کرنے سے روکنے کے لیے گرفتار کیا گیا ہے۔

فریدہ مراد خانی کو بھی گزشتہ جنوری میں اس وقت گرفتار کیا گیا تھا جب اس نے ایران کے سابق شاہ کی اہلیہ فرح پہلوی کی تعریف میں شاعری کی تھی۔تاہم ریڈیو فردا کے مطابق اس بار اس کی گرفتاری اس وقت ہوئی جب اس نے سیاسی قیدیوں کی حمایت کے لیے ایک مہم شروع کی۔یاد رہے فریدہ مرادخانی علی مرادخانی کی بیٹی ہیں جو “شیخ علی تہرانی” کے نام سے مشہور ہیں۔ یہ علی خامنہ ای کی بہن بدری حسینی کے شوہر ہیں، علی مراد خانی سابق پہلوی حکومت کے مخالف علما میں سے ایک ہیں۔وہ ایک مشہور ایرانی مصنف اور مبلغ بھی ہیں جنہوں نے 1979 میں خمینی انقلاب کی حمایت کی تھی، وہ صوبہ خراسان میں آئینی ماہرین کی کونسل میں بھی نمائندگی کرتے ہیں۔تاہم بعد میں انہوں نے اپنے موقف سے انحراف کر لیا اور حکومت کی مخالفت شروع کردی تھی، اس کی وجہ سے انہوں نے کئی ماہ مشہد میں جیل میں گزارے تھے۔

اپریل 1984 میں جیل سے رہائی کے بعد وہ خفیہ طور پر عراق فرار ہو گئے تھے جہاں انہوں نے بغداد میں عراقی فارسی بولنے والے ریڈیو اور ٹیلی ویژن پر برسوں تک کام کیا اور ایرانی حکومت کے خلاف پروپیگنڈہ پروگراموں میں حصہ لیتے رہے۔وہ 1995 میں ایران واپس آئے تو انہیں 20 سال قید کی سزا سنائی گئی تھی۔ 2000 میں یہ اعلان کیا گیا تھا کہ انہوں نے جیل کے سیل کے اندر خودکشی کر لی ہے۔تاہم ان کے خاندان نے اس کی خودکشی کی خبر کی تردید کر دی اور ان کے بیٹے محمود مرادخانی نے کہا کہ ان کے والد کی موت تشدد سے ہوئی ہے۔