China's Covid cases hit record as dissent grows over tough restrictions

بیجنگ :چین کے قوی صحت کمیشن (این یچ سی)نے جمعرات کو بتایا کہ یومیہ کوویڈ کیسز کی تعداد میں ریکارڈ اضافہ ہوا ہے جس سے ملک بھر میں بڑھتے کیسوں کے باعث وائرس کے بارے میں ملک کے تیزی سے غیر مقبول زیروٹولرنس کی سوچ پر دباؤ بڑھ رہا ہے۔این یچ سی نے بدھ کے روز مقامی طور پر منتقل ہونے والے 31,444 کیسز ریکارڈ کیے جو کہ شنگھائی کے مہینوں طویل لاک ڈاؤن کے دوران 13 اپریل کو ریکارڈ کیے گئے 29,317 سے کہیں زیادہ ہیں۔

یہ اضافہ مسلسل لاک ڈاؤن، قرنطینہ اور بڑے پیمانے پر جانچ لامی قرار دینے کے ان کے سخت گیر نقطہ نظر کے خلاف بڑھتے اور غیر معمولی ردعمل کے باوجود متعدد شہروں میں پھیلنے کی وجہ سے ہوا ہے ۔ چین نے بدھ کے روز گزشتہ ویک اینڈ سے 1,648 مقامی انفیکشن کے ساتھ اپنی چوتھی کوویڈ سے متعلق موت ریکارڈ کی۔لگا تار تیسرے روز 1,000 سے زیادہ مقامی کیسز ریکارڈ کیے گئے۔

جمعرات کو، شہر کے حکام نے کہا کہ وہ ایک بڑے نمائشی مرکز کو قرنطینہ اور کوویڈ کے مریضوں کا علاج کے لیے عارضی ہسپتال میں تبدیل کر رہے ہیں ۔ یہ دارالحکومت کی جانب سے کوویڈ پابندیاں بڑھانے کی تازہ ترین علامت تھی۔ اس ہفتے کے اوائل میں، کئی اضلاع میں اسکولوں نے آن لائن کلاسز شروع کر دیں جب کہ چاو¿انگ کے ، جو شہر میں وبا پھیلنے کا مرکز اور بہت سے بین الاقوامی کاروباروں اور سفارت خانوں کا ٹھکانہ ہے ، ریستوراں، جم اور بیوٹی سیلون بند کر دیے گئے اور رہائشیوں سے کہہ دیا گیا ہے کہ وہ گھر پر رہیں ۔