India must be cautious in dealing with US: ex-army chief General Bikram Singh

نئی دہلی : سابق آرمی چیف جنرل بکرم سنگھ نے حکومت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ وہ سٹریٹجک معاملات میں امریکہ کے ساتھ معاملات میں محتاط رہیں، ان کا کہنا تھا کہ دنیا کے سب سے طاقتور ملک نے ابھی تک اپنے قریبی اتحادیوں کے لیے اپنی ساکھ ثابت نہیں کی۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان ‘کواڈ گروپنگ’ کا رکن ہونے کے باوجود امریکہ کے ساتھ آگے بڑھنے میں احتیاط برتنی چاہئے جس نے حالیہ برسوں میں نئی دہلی کے ساتھ اپنے تعلقات کو وسعت دی ہے۔

کواڈ’ ہندوستان، امریکہ، جاپان اور آسٹریلیا کا ایک چار فریقی سیکورٹی ڈائیلاگ گروپ ہے۔ “اگرچہ یہ اچھی بات ہے کہ ہم کواڈ کا حصہ ہیں (جسے ہند-بحرالکاہل کے خطے میں چین کے خلاف ایک کاو¿نٹر ویٹ کے طور پر دیکھا جاتا ہے)، لیکن یہ ہمارے مفاد میں ہوگا کہ ہم امریکہ کے ساتھ احتیاط کے ساتھ آگے بڑھیں، کیونکہ امریکہ نے کبھی بھی اپنے ا سٹریٹجک اور دفاعی اتحادیوں کا اعتماد جیتنے کے قابل نہیں سمجھا۔

امریکہ کے ساتھ سٹریٹجک معاملات میں محتاط رویہ اختیار کرنے کی اپنی تجویز کی وجوہات کی وضاحت کرتے ہوئے، 24ویں آرمی چیف جنرل سنگھ نے کہاامریکہ پہلے ویتنام سے نکلا، پھر دو بار عراق سے اور حال ہی میں افغانستان سے نکلا۔ہمیں امریکہ کے ساتھ معاملات میں نپٹنے میں بہت محتاط رہنا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ اپنی تمام بیرونی فوجی مداخلتوں میں ناکام رہا ہے اور اس کی ایک بڑی وجہ یہ ہے کہ امریکہ اپنا کام دوسروں سے کرواتا رہا ہے۔