Pakistan Army’s decision to remain apolitical will shield it from ‘vagaries of politics’, says Gen Bajwa

اسلام آباد: پاکستان کے سبکدوش فوجی سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ کا کہنا ہے کہ فوج، جس نے کئی عشروں سے سیاست میں غیر قانونی مداخلت کی ہے ، اب ایسا نہیں کرے گی۔ بدھ کے رز فوجی سربراہ کے طور پر اپنے آخری خطاب میں، باجوہ نے ملک کے سب سے طاقتور ادارے کا، جو کہ خاص طور پر سابق وزیر اعظم عمران خان کی طرف سے تنقید کا نشانہ بنی ہے، دفاع کیا، واضح ہو کہ عمران خان نے اپریل میں ان کی برطرفی میں کردار ادا کرنے کا فوج پر الزام لگایا تھا۔

مشرقی شہر راولپنڈی میں آرمی ہیڈ کوارٹر میں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے، 62 سالہ جنرل میں حیران ہوں کہ ہمسایہ ملک ہندوستان میں فوج کو عوام نے کبھی بھی ہدف تنقید کیوں نہیں بنایا ؟ میری رائے میں پاکستان میں ایسا ہونے کی وجہ فوج کی طرف سے گزشتہ 70 سالوں سے سیاست میں مسلسل مداخلت ہے، جو کہ غیر آئینی ہے۔ اسی لیے گزشتہ سال فروری سے، فوج نے فیصلہ کیا ہے کہ وہ کسی سیاسی معاملے میں مداخلت نہیں کرے گی۔

انہوں نے مزید کہا کہ فوج نے اپناذہنی تناو¿ کم کرنا شروع کر دیا ہے اور امید ظاہر کی کہ سیاسی جماعتیں بھی اپنے رویے کا محاسبہ کریں گی۔ حقیقت یہ ہے کہ پاکستان میں ادارے، سیاسی جماعتیں ہوں اور سول سوسائٹی ہو ان سب نے غلطیاں کی ہیں۔باجوہ نے کہا کہ یہ وقت ہے کہ ہم ان سے سیکھیں اور آگے بڑھیں۔