China building Army outpost near LAC is another disturbing sign

واشنگٹن: امریکی کانگرس کے رکن راجہ کرشنامورتی نے بدھ کے روز چین کے خطرناک ہند مخالف عزائم کو بے نقاب کرتے ہوئے کہا کہ چین کی طرف سے حقیقی کنٹرول لائن کے ساتھ ہندوستان کے ساتھ ملٹری پوسٹ کی تعمیر اپنے پڑوسیوں کے خلاف چینی جارحیت کی تشویشناک علامت ہے۔ انہوں نے یہ تبصرہ اس حوالے سے ایک خبر آنے کے بعد کیا۔اخبار سیاسی نے بدھ کو دعویٰ کیا کہ چین نے ہندوستان کے ساتھ اپنی متنازع سرحد کے قریب ایک فوجی چوکی بنائی ہے۔

کرشنامورتی نے کہا کہ ہندوستان اور چین کے درمیان لائن آف ایکچوئل کنٹرول کے قریب پیپلز لبریشن آرمی کی نئی پوسٹ کے بارے میں خبریں بیجنگ کی ایک اور تشویشناک علامت ہیں۔بڑھتی ہوئی علاقائی جارحیت، جو کہ امریکہ کی ہندوستان اور دیگر سیکورٹی شراکت داروں کے ساتھ مشترکہ کوششوں کو مضبوط کرنے کی ضرورت کو دہراتی ہے۔ اخبار پولیٹیکو نے بدھ کے روز یہ بھی دعویٰ کیا کہ چین نے ہندوستان کے ساتھ اپنی متنازع سرحد کے قریب ایک فوجی چوکی بنائی ہے۔ سینٹر فار اسٹریٹجک اینڈ انٹرنیشنل اسٹڈیز ‘چائنا پاور پروجیکٹ’ کی طرف سے حاصل کردہ اور نیٹ سیک ڈیلی کے ساتھ شیئر کی گئی تصاویر میں پیپلز لبریشن آرمی پینگونگ تسو میں ایک ہیڈ کوارٹر اور گھر کے فوجیوں کے لیے گیریڑن بنا رہی ہے۔

راجہ کرشنامورتی نے کہا کہ چینی کمیونسٹ پارٹی نے اپنے پرانے طریقے نہیں چھوڑے ہیں۔ ملک میں گھریلو جبر، اویغور مسلمانوں پر وحشیانہ ظلم و ستم اور آن لائن غلط معلومات کی کوششیں اب بھی عروج پر ہیں۔ اس لیے ہندوستان سے آبنائے تائیوان تک اس کی بڑھتی ہوئی بین الاقوامی فوجی جارحیت کے اشارے بھی مل رہے ہیں۔ راجہ کرشنامورتی نے کہا کہ چین کے جارحانہ عزائم کے پیش نظر یہ ضروری ہے کہ امریکہ اپنے اتحادیوں کے ساتھ سیکورٹی اور انٹیلی جنس تعاون کو مزید بڑھائے۔