North Korea Wants Citizens to Give Children 'Patriotic' Names Like 'Bomb', 'Gun'

پیون یانگ: شمالی کوریا میں والدین کے لیے عجیب و غریب حکم نامہ جاری کر دیا گیا ہے۔ شمالی کوریا کے حکام نے والدین سے کہا ہے کہ وہ اپنے بچوں کے نام حب الوطنی پر رکھیں۔ کوریائی حکومت نے کہا کہ والدین اپنے بچوں کے نام بموں، بندوقوں اور سیٹلائٹ کے ناموں پر رکھیں۔ حکومت کا کہنا ہے کہ والدین کو اپنے بچوں کے لیے زیادہ نظریاتی اور عسکری ناموں کا انتخاب کرنا چاہیے اور ایسے ناموں سے گریز کرنا چاہیے جو بہت سادہ ہوں۔ریڈیو فری ایشیا کی رپورٹ میں مقامی لوگوں نے دعویٰ کیا کہ حکومت کی جانب سے بچوں کے نام سادہ کے بجائے محب وطن رکھنے کا حکم جاری کیا گیا ہے۔

شمالی کوریا کی حکومت نے اپنے شہریوں کو جنوبی کوریا کے زیادہ پیارے نام جیسے اے ری (پیار کرنے والے)اور سو می (بہت خوبصورت) جیسے القابات استعمال کرنے کی اجازت دی تھی، لیکن اب حکومت کی جانب سے ایک نیا حکم نامہ جاری کیا گیا ہے اور لوگوں سے کہا گیا ہے کہ وہ زیادہ سے زیادہ اپنے محب وطن اور نظریاتی نام رکھنے کو یقینی بنائیں۔ شمالی کوریا کے رہنما کم جونگ ان چاہتے ہیں کہ والدین اپنے بچوں کے نام پوک ال (بم)، چنگ سم (وفاداری) اور یوئی سونگ (سیٹیلائٹ) کی طرز پر رکھیں۔

حکومت کی جانب سے کہا گیا ہے کہ اگر کوئی شخص ایسا نہیں کرتا تو اس پر بھاری جرمانہ عائد کیا جائے گا۔ یہی نہیں حکومت کے حکم کی خلاف ورزی کرنے والے کو سماج دشمن قرار دیا جائے گا۔ گزشتہ ماہ سے لوگوں کو اس حکم کی تعمیل کے لیے نوٹس جاری کیے جا رہے ہیں۔ اس کے پاس اس سال کے آخر تک نام درست کرنے کا وقت ہے۔ وہیں حکومت کے اس حکم پر لوگ ناراض ہیں۔ لوگ کہتے ہیں کہ ہم انسانوں کو اپنا نام رکھنے کی بھی آزادی نہیں ہے۔