China is targeting smaller nations with Cyber Attacksتصویر سوشل میڈیا

واشنگٹن: چین اپنی جارحانہ حرکات کے باعث مسلسل دنیا کی نظروں میں کھٹک رہا ہے۔ اب مائیکرو سافٹ کمپنی نے چین پر بڑا الزام لگایا کہ ڈیجیٹل ڈیفنس رپورٹ 2022 جاری کر دی ہے۔ اس میں چین پر چھوٹے ممالک پر سائبر حملے کرنے کا الزام لگایا گیا ہے۔ یہ سائبر حملے نمیبیا، ماریشس اور ٹرینیڈاڈ اور ٹوباگو سمیت افریقہ، کیریبین، مشرق وسطی، اوشیانا اور گلوبل ساؤتھ کے ممالک پر کیے جا رہے ہیں۔ چین کی طرف سے زیادہ تر حملے ‘ زیرو ڈے (صفر دن )کی کمزوری کا فائدہ اٹھاتے ہیں۔یعنی چینی سائبر حملہ آور سافٹ ویئر میں پہلے سے موجود خامیوں کا فائدہ اٹھا کر ان ممالک کو نشانہ بنا رہے ہیں۔

ڈیجیٹل تبدیلی تیزی سے سائبر کرائم کے خطرے کو نے جسمانی سطح پر بھی بڑھا دیا ہے۔ اس سے قبل امریکہ میں قائم سائبر سکیورٹی انٹیلی جنس کمپنی نے بھی چین پر ایسے ہی الزامات عائد کیے تھے۔ سائبر سکیورٹی فرم نے اپنی رپورٹ میں بتایا تھا کہ چینی ایجنٹ صارفین کو بدنیتی پر مبنی دستاویزات یا فائلیں بھیجتے ہیں۔ جنہیں کھولنے پر صارفین کے ڈیوائس پر بدنیتی پر مبنی کوڈزڈاو¿ن لوڈ ہوجاتے ہیں اور پھر صارف کی سرگرمی کی نگرانی کی جاتی ہے۔لیکن، اب ہیکرز اپنے طریقے بدل رہے ہیں۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ وہ ان خامیوں سے فائدہ اٹھانے کے لیے انٹرنیٹ فیسنگ ڈیوائس یا سروس جیسے وی پی این ایس اور را۔ٹرز کا سہارا لیتے ہیں۔ خاص طور پر را۔

ٹرز کو نشانہ بنایا جاتا ہے۔ اس سے انٹرنیٹ را۔ٹر سے وابستہ ڈیوائس تک رسائی حاصل کرنے کی کوشش کرتا ہے۔ یہ پہلا موقع نہیں ہے کہ چین پر اس طرح کے الزامات لگائے گئے ہوں۔ کئی رپورٹس میں سائبر حملوں کے پیچھے چین کو پہلے ہی بتایا جا چکا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *