Chinese confidence in Pakistan's security system shakenتصویر سوشل میڈیا

اسلام آباد: ایک سینئر پاکستانی پارلیمنٹیرین مشاہد حسین کا کہنا ہے کہ گزشتہ ماہ کراچی یونیورسٹی پر حملے کے بعد چینی شہریوں اور اس کے منصوبوں کو تحفظ فراہم کرنے کے لیے پاکستان کی سکیورٹی ایجنسیوں کی صلاحیت پر چین کا اعتماد ختم ہو گیا ہے۔ واضح ہو کہ بلوچستان لبریشن آرمی (بی ایل اے)سے تعلق رکھنے والی برقع پوش خاتون خودکش بمبار نے 26 اپریل کو کراچی کی معروف یونیورسٹی میں کنفیوشس انسٹی ٹیوٹ کی وین کو دھماکے سے اڑا دیا تھا، جس میں تین چینی اساتذہ ہلاک ہو گئے تھے۔ یہ پاکستان میں چینی شہریوں کو نشانہ بنانے والا تازہ ترین حملہ تھا ۔

پاکستان کے سینئر سینیٹر مشاہد حسین نے جمعہ کے روز روزنامہ ڈان کو حملے کے بعد چینی فریق کے بارے میں بتایا، چینی حکومت کو اس حملے پر شدید تشویش اور برہمی ہے۔ مشاہد حسین، سینیٹ کی دفاعی کمیٹی کے چیئرمین بھی ہیں۔حسین کی قیادت میں سینیٹ کے ایک وفد نے یونیورسٹی حملے میں چینی شہریوں کی ہلاکت پر اظہار تعزیت اور تعزیت کے لیے گزشتہ ہفتے چینی سفارت خانے کا دورہ کیا۔ حسین نے کہا کہ کراچی یونیورسٹی پر حملے کے بعد سے، چینی شہریوں اور اس کے منصوبوں کو تحفظ دینے کے لیے پاکستان کی سکیورٹی ایجنسیوں کی صلاحیت پر چین کا اعتماد ختم ہو گیا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *