Chinese Covid vax found 50.4% effective in Brazil trialsتصویر سوشل میڈیا

براسیلیا: کورونا وائرس کا درد پوری دنیا میں پھیلانے والا چین ا ب ویکسین کے نام پر ٹھگنے کے میں لگا ہو ا ہے۔ چین کے تازہ دھوکے کا شکار بنا ہے برازیل جہاں چین ویکسین ٹرائل میںبری طرح فلاپ ہوا ہے۔ چین کے سائنوواک بائیوٹیک کے ذریعے تیار کردہ کورونو وائرس ویکسین کا ٹرائل برازیل میں ناکام ہوگیا۔

چینی کورونا ویکسین برازیل میں جانچ کے دوران صرف 50.4 موثر ثابت ہوئی۔ اگرچہ متعدی بیماریوں کے لئے تیار کردہ ایک ویکسین کم از کم 95 فیصد سے زیادہ موثر ہونی چاہئے ، چین نے برازیل کو غلط اعداد و شمار بتاتے ہوئے اس ویکسین کو انتہائی موثر قرار دیا تھا۔چینی ویکسین کے اس نتیجے سے برازیل کی حکومت اور اس کے محکمہ صحت کو بڑا دھچکا لگا ہے کیونکہ برازیل میں کورونا انفیکشن کا دوسرا مرحلہ تباہی مچا رہا ہے۔

برازیل کی حکومت جلد سے جلد اپنے لوگوں کو پولیو سے بچا ؤکے قطرے پلانے کی کوشش کر رہی ہے تاکہ انھیں کورونا سے متاثر ہونے سے بچایا جاسکے۔ لیکن چینی ویکسین فلاپ ہونے سے برازیل کی حکومت کو شدید مایوسی ہوئی ہے۔برازیل کے سائنس دان اور صدر چین کو برازیل کے بہت سے سائنس دانوں نے چینی ویکسین فلاپ پر شدید تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔ اسی کے ساتھ ہی برازیل کے صدر جیر بولسنارو نے چین پر سخت اعتراض درج کیا ہے۔ دراصل ، برازیل کے ساتھ ویکسین معاہدے کے دوران چین نے برازیل کو غلط ڈیٹا دیا تھا ، جو چینی ویکسین فلاپ ہونے کے بعد سامنے آیا ہے۔

بٹانن بایومیڈیکل سینٹر کی شدید تنقید کی ہے۔ برازیل کے سائنس دانوں کا کہنا ہے کہ چین نے ویکسین کے بارے میں غلط معلومات دے کر ان کو دھوکہ دیا ہے۔چین کے دارالحکومت بیجنگ ساﺅنوک نامی بائیوفرماسٹیکل کمپنی میں یہ ویکسین بنا رہی ہے۔ اور یہ ویکسین برازیل کے بیوٹانن انسٹی ٹیوٹ کے ذریعہ جانچ کی جارہی ہے۔

بیوٹانن نے گذشتہ ہفتے کہا تھا کہ یہ ویکسین تقریبا 78فیصد لوگوں پر کام کر رہی ہے ، لیکن اب یہ انکشاف ہوا ہے کہ اعداد و شمار میں مسیحائی کرنے والے لوگوں کو شامل نہیں کیا گیا تھا۔ اور جب اعداد و شمار میں ماڈیول ٹو سیوئیر لوگوں کو ڈیٹا میں شامل کیا گیا تھا ، تب یہ ویکسین صرف 50.4 فیصد موثر تھی۔ برازیل میں کورونا وبا تباہی مچا رہی ہے اس کے باوجود چین نے برازیل کو ویکسین کے نام پر ایسے موقع پر دھوکہ دیا ہے ، جب برازیل میں کورونا کی وجہ سے سب سے زیادہ اموات ہو رہی ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *