Four-yr-old Indian girl dies after sleeping off in Qatar school busتصویر سوشل میڈیا

تروننتھا پورم:(اے یو ایس)قطر میں مقیم کیرل کی ایک 4 سالہ لڑکی ایک اسکولی بس میں مردہ حالت میں پائی گئی ہے۔ اتفاق سے اسی دن یعنی 11 ستمبر کو اس لڑکی کی سالگرہ تھی۔ متوفی کی شناخت منسا مریم جیکب کے طور پر کی گئی ہے۔ اس کا تعلق کیرل کے کوٹائم ضلع کے چنگوانم سے ہے۔ جو کہ ڈیزائنر-کم-آرٹسٹ کوچوپرمبیل ابھیلاش چاکو اور سومیا کی بیٹی تھی۔دوپہر کے وقت جب اسکولی بس کا عملہ واپسی کے سفر سے پہلے بس میں داخل ہوا تو انہوں نے لڑکی کو بے ہوشی کی حالت میں دیکھا۔ اگرچہ اسے الوکرا کے ایک ہسپتال لے جایا گیا لیکن اس کی جان نہیں بچ سکی۔

مریم کی موت کی خبر نے آن لائن غم اور غصے کی لہر کو جنم دیا ہے، بہت سے لوگوں نے فوری کارروائی اور جوابدہی کا مطالبہ کیا ہے۔قطر کی وزارت تعلیم نے واقعے کی تحقیقات کا آغاز کرتے ہوئے لڑکی کی موت پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔ ٹویٹر پر ایک بیان میں قطر کی وزارت تعلیم نے کہا کہ وزارت تعلیم اور اعلیٰ تعلیم ایک نجی اسکول میں کنڈرگارٹن کے طالب علم کی موت پر سوگ کا اظہار کرتی ہے۔ وزارت نے متعلقہ حکام کے ساتھ مل کر اس واقعے کی تحقیقات شروع کر دی ہیں۔وہ دوحہ میں الواکرا میں اسپرنگ فیلڈ کنڈرگارٹن کی کنڈرگارٹن کی طالبہ تھیں۔

رپورٹس کے مطابق منسا مریم جیکب اسکول جاتے ہوئے سو رہی تھیں اور اسکول بس کے عملے نے یہ نہیں دیکھا کہ وہ اپنے ساتھی طلبہ کے ساتھ بس سے نہیں اتری اس کے بعد کیا ہوا اور کیسے ہوا، اس بارے میں تحقیقات کی جارہی ہے۔ مبینہ طور پر بس دن کی گرمی کے دوران کھلی جگہ پر کھڑی تھی۔ جو دوپہر کے وقت 40 ڈگری سیلسیس (104 ڈگری فارن ہائیٹ) سے زیادہ بڑھ سکتی ہے۔ اس وقت بھی کسی کو پتہ نہیں تھا کہ یہ لڑکی بس میں ہے یا وہ اسکول چلی گئی ہے یا وہ لاپتہ ہوگئی ہے۔وزارت اور متعلقہ حکام متعلقہ ضوابط کے مطابق اور جاری تحقیقات کے نتائج کی بنیاد پر ضروری اقدامات کریں گے اور مجرموں کے لیے زیادہ سے زیادہ سزا کو یقینی بنائیں گے۔ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ وزارت اپنے طلبہ کے لیے سیکورٹی اور حفاظتی معیار پر عمل پیرا ہونے کی یقین دھانی کرتی ہے اور اس سلسلے میں کسی کوتاہی کو برداشت نہیں کرے گی۔ وزارت متوفی طالب علم کے اہل خانہ سے دلی تعزیت کا اظہار کرتا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *