India witnessing higher spread of Covid-19 infection than second wave peakتصویر سوشل میڈیا

نئی دہلی: مرکز نے بدھ کے روز کہا کہ ہندوستان میں کورونا وائرس کے کیسز کی تعداد تیزی سے بڑھ رہی ہے، جس کی وجہ نئی شکل آومیکرون سمجھا جاتا ہے۔ اس نے اس بات پر زور دیا کہ انفیکشن کے پھیلاؤ کی رفتار کو ظاہر کرنے والا آر ناٹ ویلو’ پیمانہ 2.69 ہے، جو کہ وبائی امراض کی دوسری لہر کے عروج کے دوران ریکارڈ کیے گئے آر ناٹ ویلو’ 1.69 سے زیادہ ہے۔انڈین کونسل آف میڈیکل ریسرچ (آئی سی ایم آر) کے ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹر بلرام بھارگوا نے یہاں ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ شہروں میں کوویڈ کیسز کی تعداد میں اضافہ دیکھا جا رہا ہے اور ‘اومیکرون کا پھیلاؤ اہم ہے’۔ انہوں نے زور دیا کہ انفیکشن کے پھیلاؤ کو کم کرنے کے لیے بڑے پیمانے پر اجتماعات سے گریز کرنے کی ضرورت ہے۔

قومی دارالخلافہ دہلی میں کورونا کے نئے کیسز کی تعداد مسلسل بڑھ رہی ہے۔ دہلی میں گزشتہ 24 گھنٹوں میں کورونا کے 10,665 نئے معاملے سامنے آئے ہیں۔ گزشتہ 24 گھنٹوں میں یہ تعداد تقریباً دوگنی ہو گئی ہے، منگل کو 5481 نئے کیس رپورٹ ہوئے۔ یہ 12 مئی کے بعد ایک دن میں سامنے آنے والے نئے کیسز کی سب سے زیادہ تعداد ہے۔ یہی نہیں، گزشتہ 24 گھنٹوں میں 8 لوگوں کی کورونا انفیکشن کی وجہ سے موت ہوئی ہے۔ یہ دہلی میں 26 جون کے بعد ایک ہی دن میں کورونا کی وجہ سے سب سے زیادہ اموات ہیں۔ کورونا کے بڑھتے ہوئے کیسز کے پیش نظر تمل ناڈو حکومت نے بھی جمعرات سے ریاست میں نائٹ کرفیو اور ہر اتوار کو لاک ڈاؤن کرنے کا اعلان کیا ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ گوا اور پنجاب نے بھی رات کا کرفیو نافذ کرتے ہوئے اسکولوں کو بند کرنے کا اعلان کیا ہے۔

دراصل، بھارت میں گزشتہ 24 گھنٹوں میں 58,097 نئے کورونا مریض سامنے آئے ہیں۔ جو کل کے 37,379 کیسز سے 55 فیصد زیادہ ہے۔ یہ تعداد صرف چار دن پہلے دیکھے گئے کیسوں کی تعداد سے دوگنی ہے، جس نے ایک بار پھر تمام ریاستوں میں خطرے کی گھنٹی بجنا شروع کر دی ۔ گجرات کے محکمہ صحت نے کہا کہ بدھ کے روز ریاست میں کووڈ-19 کے 3,350 کیسز ایک ہی دن میں رپورٹ ہوئے اور گزشتہ سال 26 مئی کے بعد پہلی بار ریاست میں روزانہ انفیکشن کی تعداد 3,000 سے تجاوز کر گئی ہے۔ ریاست میں متاثرین کی کل تعداد 8,40,643 ہو گئی ہے۔ گجرات میں 23 مئی 2021 کو انفیکشن کے 3,794 معاملے تھے۔ اس کے بعد 26 مئی کو ایک بار پھر یومیہ کیسز کی تعداد 3000 سے زیادہ ہو گئی۔ اس سے ایک دن پہلے گجرات میں انفیکشن کے 2,265 نئے کیس سامنے آئے تھے۔ اتر پردیش میں مسلسل بڑھتے ہوئے کورونا کیسز تشویش کا باعث بن رہے ہیں۔

گزشتہ 24 گھنٹوں کے اندر ریاست میں کورونا کے 2038 نئے کیسز کے بعد ہلچل مچ گئی ہے۔ ان میں سے 288 نئے مریض لکھنؤ میں ہی سامنے آئے ہیں۔ اس کے علاوہ 511 نوئیڈا اور غازی آباد میں 255 نئے کورونا مریضوں کی تصدیق ہوئی ہے۔ اس کے ساتھ ہی یہاں ایکٹیو کیسز کی تعداد بڑھ کر 5158 ہو گئی ہے۔ جموں وکشمیر میں بدھ کو کووڈ معاملات میں پچھلے تقریباً چار مہینے میں سب سے بڑا اضافہ درج کیا گیا، جس کے بعد رات نو بجے سے صبح کے 6 بجے تک کرفیو نافذ کیا گیا۔ حالانکہ سرکاری حکم نامہ میں لفظ کرفیو کا استعمال نہیں کیا گیا ہئے لیکن لکھا گیا ہے کہ اہم خدمات کے بغیر اس وقت میں کسی بھی طرح کی نقل و حمل کی اجازت نہیں ہوگی۔

بدھ کو سرکاری طور دیئے گئے اعداد و شمار کے مطابق، جموں کشمیر میں کووڈ کے 418 معاملے درج کئے گئے، جن میں سے 107 کشمیر صوبہ میں اور 156 جموں صوبہ میں درج کئے گئے۔ ہماچل پردیش کی حکومت نے بدھ کو کووڈ-19 کے پھیلاو¿ کو روکنے کے لیے ریاست میں رات 10 بجے سے صبح 5 بجے تک رات کا کرفیو نافذ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ یہ اطلاع دیتے ہوئے حکومتی ترجمان نے بتایا کہ ریاست میں انڈور اسپورٹس کمپلیکس اور سنیما ہالوں کو بند کرنے کا بھی فیصلہ کیا گیا ہے اور شادیوں اور بینکوئٹ ہالوں میں 50 فیصد حاضری کی اجازت دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *