Iran summons British envoy, alleging UK meddling in unrestتصویر سوشل میڈیا

لندن:(اے یو ایس ) ایرانی وزارت خارجہ نے برطانوی سفیر کو طلب کیا ہے۔ برطانوی سفیر کی یہ طلبی اس بیان کے بعد ہوئی ہے جو برطانیہ کی وزارت خارجہ کی طرف سے ایران میں جاری صورت حال کے بارے میں دیا گیا ہے۔ایران کی طرف سے اس پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ برطانیہ کی طرف سے ان یکطرفہ بیانات کا مطلب یہ ہے کہ ایران میں موجودہ دہشت گردانہ سرگرمیوں میں برطانیہ کا بھی کردار ہے۔ اس امر کا اظہار ایرانی وزارت خارجہ میں ڈائریکٹر جنرل برائے مغربی یورپ نے یہ کہتے
ہوئے کیا کہ برطانوی ریمارکس بے بنیاد ہونے کے علاوہ ایران کے اندرونی معاملات میں مداخلت اور اشتعال انگیز تشریح پر مبنی ہیں۔

واضح رہے برطانوی وزارت خارجہ نے پیر کے روز کہا تھا کہ اس نے لندن میں ایرانی ناظم الامور کو ایران میں بائیس سالہ کرد مہسا
امینی کی ہلاکت کے بعد مظاہرین کے خلاف جاری کریک ڈاون پر طلب کیا تھا۔ اس کے جواب میں ایرانی وزارت خارجہ نے برطانوی سفیر کو منگل کے روز دفتر خارجہ طلب کر لیا۔ایرانی حکام کا کہنا ہے کہ برطانیہ کی طرف سے کسی بھی غیرمعمولی اقدام کا ہر ممکن طریقے سے جواب دیا جائے گا۔ خیال رہے مہسا امینی کو 13 ستمبر کو ایرانی پولیس نے گرفتار کیا تھا۔ وہ پولیس حراست میں ہی ہلاک ہو گئی تھی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *