Israeli army kills Palestinian teenager in occupied West Bankتصویر سوشل میڈیا

رملہ:(اے یو ایس ) مقبوضہ فلسطین کے مغربی کنارے میں رملہ کے قریب قصبے بیتونیا میں پیر کے روز ایک آپریشن کے دوران گولی مار کر ایک فلسطینی دوشیزہ کو شہید کر دیا۔فلسطینی وزارت صحت کے مطابق واقعہ 14 نومبر کو پیش آیا۔ دوسری طرف اسرائیلی فوج کا کہنا ہے کہ اس نے ایک مشکوک گاڑی پر فائرنگ کی تھی۔فلسطینی وزارت صحت کے اعلان میں مقتولہ کی شناخت 16 سالہ فلہ رسمی عبدالعزیز المسلمة کے نام سے کی گئی ہے جسے طبی ذرائع کے مطابق سر میں گولی ماری گئی ہے۔اس سے قبل فلسطینی حکام نے قتل کی گئی دو شیزہ کی شناخت کے حوالے سے بتایا تھا کہ وہ 19 سالہ ثنا الطل تھی۔

تاہم بعد میں معلومات کو درست کرتے ہوئے بتایا کہ شہید ہونے والی خاتون فلہ رسمی المسلمة ہے۔ المسلمة کو ،جو جنوبی مقبوضہ مغربی کنارے کے ہیبرون ہر کے الشہیریان کی رہائش پذیر تھی، جس وقت گولی ماری گئی تو وہ کار میں تھی۔ایک عینی شاہد نے وفا کو بتایا کہ المسلة اور حسینی اس بات سے بے خبر کہ کئی جگہوں پر اسرائیلی فوجی تعینا ت ہیں، ایک سڑک سے گذر رہے تھے وہاں فوج کی موجودگی دیکھ کر حیران رہ گئے۔اور جب انہوں نے واپس مڑنا چاہا تو مخالف سمت کھڑے دیگر اسرائیلی فوجیوں نے کوئی انتباہ دیے بغیر فئرنگ شروع کر دی ۔جس میں المسلمة نے موقع پر ہی دم توڑ دیا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *