Likud says it will form government ‘quickly,’ as Herzog consults parties on PM pickتصویر سوشل میڈیا

تل ابیب:(اے یو ایس )لیکود کے سینئر قانون ساز یاریو لیون نے کہا ہے کہ ان کی پارٹی اسرائیل میں آئندہ حکومت تشکیل دینے کا ارادہ رکھتی ہے، کیونکہ صدر اسحاق ہرتسوغ نے لیکوڈ رہنما بنجمن نیتن یاہو کو اگلا اتحاد قائم کرنے کا کام سونپنے سے پہلے سیاست دانوں سے باضابطہ مشاورت شروع کر دی ہے۔لیون نے یہ تبصرہ ان رپورٹس کے درمیان کہ نیتن یاہو پارٹیوں پر دباؤ ڈال رہے ہیں کہ زیادہ سے زیادہ آئندہ ہفتہ تک حکومت تشکیل دے دی جائے ، منظر عام پر آئے ہیں ۔اسرائیلی صدر اسحاق آج بدھ کے روز وزارت عظمیٰ کے ممکنہ امیدوار کے لیے مختلف سیاسی گروہوں کےساتھ مشاورتی عمل شروع کر دیا ۔ یہ ملاقاتیں اور مشاورت تین دن تک جاری رہے گی۔صدر کی طرف سے اس مشاورتی عمل کا آغاز انتخابی نتائج کا سرکاری اعلان ہونے کے بعد کیا گیا ہے۔

تاکہ وہ چار سال میں پنچویں اسرائیلی وزیر اعظم کی نامزدگی کی ذمہ داری پوری کر سکیں۔جب اسرائیلی صدر کسی ایک امیدوار کو وزارت عظمیٰ کے لیے نامزد کر دیں گے تو ضابطے کے مطابق اس امیدوار کو 28 دنوں میں اپنی اکثریت ثابت کرنا ہو گی۔ اٹھائی دنوں میں اکثریت ثابت نہ کر سکنے پر مذکورہ امیدوار کو مزید 14 دن کی توسیعی سہولت دی جاسکتی ہے۔دوسری جانب اب تک نتائج سے ظاہر ہوتا ہے کہ بنجمن نیتن یاہو ہی اکثریت ظاہر کر سکیں گے۔ نیتن یاہو ان دنوں کرپشن کیسز کا سامنا کر رہے ہیں۔ تاہم یاہو کرپشن الزامات کا انکار کرتے ہیں۔انہوں نے اسرائیلی یہودی مذہبی شناخت رکھنے والی جماعتوں کے ساتھ مل کر اکثریت حاصل کر لی ہے۔ انتخابی نتائج کے برد نیتن یاہو نے اپنے اہم اتحادی بن گویر سے ملاقات کی ہے۔ بن گویر 2007 نسل پرستی بڑھانے کے الزام میں سزا پا چکے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *