Nepal Airlines has decided to sell five of its Chinese-made aircraft as nobody wants to lease themتصویر سوشل میڈیا

کٹھمنڈو: چین کے کھٹارہ طیاروں کی وجہ سے نیپال ایئرلائنز کو بھاری نقصان کا سامنا کرنا پڑ رہاہے۔ اس بحران پر قابو پانے کے لیے نیپال ایئرلائنز نے چینی ساختہ اپنے پانچ طیارے فروخت کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ درحقیقت کوئی بھی ان چینی کھٹا رہ طیاروں کو لیز پر لینے کو تیار نہیں ہے۔ نیپالی میڈیا کے مطابق ان طیاروں نے فضا کے مقابلے زمین پر زیادہ وقت گزارا۔

یہ طیارے قرضوں میں ڈوبی قومی پرچم بردار کمپنی نیپال ایئر لائن پر مالی بوجھ بن رہے تھے۔نیپال ایئر لائنز نے تقریبا 8 سال قبل چینی طیاروں کی پہلی کھیپ حاصل کی تھی۔ اب ایئر لائنز نے بالآخر فیصلہ کیا کہ وہ وزارت خزانہ کی ہدایات کے بعد انہیں فروخت کرے گی۔ 2012 میں، نیپالی حکومت نے چین سے چار وائی 12 ای اور دو ایم اے 60 طیاروں کی خریداری کے معاہدے میں توسیع کی تھی۔ ان میں سے ایک طیارہ حادثے کے بعد اب پرواز کی حالت میں نہیں ہے، جب کہ بقیہ پانچ تربھون بین الاقوامی ہوائی اڈے کی پارکنگ میں بے کار کھڑے ہیں۔

دیکھ بھال کے مسائل اور اسپیئر پارٹس کی کمی کے علاوہ نیپال ایئر لائنز کو بھی ہوائی جہاز اڑانے کے لیے پائلٹ نہیں مل رہے ہیں۔رپورٹ کے مطابق ان تمام مسائل کے بعد اب ان طیاروں کو رکھنے کا کوئی فائدہ نہیں تھا۔نیپال ایئر لائنز کی طرف سے مقرر کردہ بولی کی آخری تاریخ 31 اکتوبر ہے۔ نیپال ایئر لائنز کے کچھ اعلیٰ حکام کا کہنا ہے کہ انہیں نہیں لگتا کہ اب کوئی ان طیاروں کو لیز پر لے گا۔ کہا جاتا ہے کہ وزارت خزانہ نے کارپوریشن کو ہدایت دی ہے کہ وہ ان طیاروں کو کسی کو فروخت کرنے کی تیاری کرے۔ جب سے 2014 میں نیپال نے انہیں چینی طیارہ خریدنے کے بعد میدان میں اتارا تھا تب سے وہ سر درد بن گیا تھا۔ اب جوں جوں خسارہ بڑھتا جا رہا ہے، صورت حال یہ ہو گئی ہے کہ ان طیاروں کو خسارے کی قیمت پر بیچنا پڑ رہا ہے۔

نومبر 2012 میں، نیپال ایئر لائنز کارپوریشن(این اے سی)نے ہوائی جہاز کی خریداری کے لیے چینی حکومت کے ادارے ایوی ایشن انڈسٹری کارپوریشن آف چائنا کے ساتھ تجارتی معاہدے پر دستخط کیے تھے۔ اس وقت، چین نے 408 ملین چینی یوآن کی گرانٹ اور رعایتی کریڈٹ امداد فراہم کی، جو کہ 6.67 بلین نیپالی روپے کے برابر ہے۔ کل امداد فراہم کی تھی، 180 ملین یوآن(نیپالی روپے 2.94 بلین) کی گرانٹ ایک ایم اے 60 اور ایک Y12e طیارے کی ادائیگی کے لیے دی گئی۔ دوسرے طیارے چین کے ایگزم بینک کے فراہم کردہ نرم قرض کے ساتھ 228 ملین یوآن (نیپالی روپے 3.72 بلین) میں خریدے گئے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *