Pak Opposition leader opposes establishment of national parks in occupied Gilgit Baltistan: Reportتصویر سوشل میڈیا

اسلام آباد: پاک میڈیاکی اطلاعات کے مطابق گلگت بلتستان اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر امجد حسین ایڈووکیٹ نے خطے میں2 قومی پارکس بنانے کے حکومتی منصوبے پر تحفظات کا اظہار کیا۔اپوزیشن لیڈر نے تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ حکومت مقامی لوگوں کے قدرتی وسائل پر ان کے حقوق کا تحفظ نہیں کر پا رہی ہے ۔

انہوں نے آئندہ اسمبلی اجلاس کے دوران اس مسئلے کو اٹھانے کا وعدہ کیا۔ڈان نیوز کے ذریعہ یہاں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے حسین کے حوالے سے کہا گیا کہ دیامر میں 1989 مربع کلومیٹر رقبہ پراور دیامر میں 1196 مربع کلومیٹر کے رقبے پر قومی پارک قائم کرنے کے لئے مقامی لوگوں کے حقوق کے تحفظ کو دھیان میں رکھے بغیر اور جی بی کے نمائندوں کو اعتماد میں لئے بغیر سخت مزاحمت کی جائے گی۔

حزب اختلاف کے رہنما نے جی بی میں اخبار کو بتایا کہ یہاں کے لوگ کاشتکاری اور مویشی پالنے سے روزگار کمانے کے لئے اپنی زمینوں پر انحصار کرتے ہیں۔انہوں نے ڈان نیوز کو بتایا ، “اس فیصلے کے تحت قومی پارکوں کے رہائشی نہ تو جڑی بوٹیوں کا استعمال کرسکتے ہیں اور نہ ہی لکڑیوں کو کاٹ کر استعمال میں لا سکتے ہیں۔”اپوزیشن لیڈر نے نشاندہی کی کہ “ہمیں نیشنل پارک ایریا میں بیرونی سرمایہ کاروں کے ذریعے سیاحت کے فروغ کے نام پر بے بنیاد تعمیرات کا اندیشہ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *