Pakistan: Banned outfit TTP demands Rs 8 mn in ‘extortion’ from KP minister Atif Khanتصویر سوشل میڈیا

پشاور:((اے یوایس ) کالعدم تحریک طالبان (ٹی ٹی پی) نے خیبر پختونخوا کے صوبائی وزیر عاطف خان سے لاکھوں روپے بھتے کا مطالبہ کردیا۔کالعدم تنظیم نے صوبائی وزیر خوراک ، کھیل و اومور نوجوانان اور سائنس و انفارمیشن ٹیکنالوجی عاطف کو خان کو ایک خط لکھ کر انتباہ دیا کہ آپ ٹی ٹی پی مردان کے مطلو ب افراد کی فہرست میں شامل ہیں۔ کالعدم ٹی ٹی پی کے خط کی نقل کے مطابق عاطف خان کو کہا گیا کہ اگر انہیں ٹی ٹی پی کے مطلوبہ افراد کی فہرست سے نکلنا ہے تو اس کے لیے 80 لاکھ روپے دینے ہوں گے۔خط میں صوبائی وزیر کو انتباہ دیا گیا کہ ہمارے پاس آپ کے حوالے سے مکمل معلومات اور ریکارڈ موجود ہے، 3 روز کے اندر جواب دیں۔دوسری جانب عاطف خان نے کالعدم تحریک طالبان کی جانب سے بھتے کی رقم کا خط موصول ہونے کی تصدیق کی۔

خیال رہے کہ گزشتہ ماہ سینیٹ کی کمیٹی برائے دفاع کوایک بریفنگ میں سیکیورٹی حکام نے ٹی ٹی پی کے دوبارہ سر اٹھانے کی رپورٹوں کو مسترد کرتے ہوئے انہیں مبالغہ آرائی قرار دیا تھا۔ذرائع کے مطابق سیکیورٹی حکام نے ان خبروں کی بھی تردید کی تھی کہ ٹی ٹی پی کے مسلح افرادکو امن مذاکرات کے دوران طے پانے والی کسی سمجھوتے کے تحت افغانستان میں ان کے محفوظ ٹھکانوں سے وطن واپس آنے کی اجازت دی گئی تھی۔ٹی ٹی پی کے متعدد جنگجو جون اور جولائی میں افغانستان سے حکومت کے ساتھ امن مذاکرات کے دوران واپس آئے تھے۔

واپس آنے والے عسکریت پسندوں کو پہلی مرتبہ اگست کے شروع میں سوات کے علاقے دیر میں دیکھا گیا جب انہوں نے ایک فوجی افسر اور ایک پولیس اہلکار کو یرغمال بنایا تھا۔بعدازاں دونوں کو مقامی عمائدین کے ساتھ بات چیت کے بعد رہا کردیا گیا تھا، اس کے بعد سے علاقے میں تشدد میں اضافہ ہوا ہے اور اغوا برائے تاوان اور بھتہ خوری کے واقعات کی اطلاعات ہیں۔خیال کیا جاتا ہے کہ تقریباً 450 انتہا پسندوں کو اپنے ہتھیاروں سمیت واپس جانے کی اجازت دی گئی تھی۔اس وقت یہ بھی کہا گیا تھا کہ انہیں پہاڑیوں میں ہتھیار رکھنے کی اجازت تھی، لیکن انہیں غیر مسلح ہو کر اپنے گھروں میں جانا تھا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *