Sudan’s Burhan says Israel visits not politicalتصویر سوشل میڈیا

خرطوم:(اے یو ایس)سوڈان کے فوجی رہنما جنرل عبد الفتاح البرہان نے مغربی ملکوں کی پابندیوں کی دھمکی کو خارج کرتے ہوئے کہا کہ سوڈانی اور اسرائیلی حکام کے درمیان ملاقات سیاسی نوعیت کی نہیں بلکہ سیکورٹی تعاون کا ایک جزو تھی۔واضح ہو کہ سوڈان کے اعلیٰ سطح کے وفد نے دوطرفہ تعلقات کومضبوط بنانے کے لیے حال ہی میں اسرائیل کا دورہ کیا تھا۔ذرائع نے بتایا کہ سوڈانی فوج اور انٹیلی جنس کے اعلیٰ حکام اسی ہفتے اسرائیل پہنچے تھے۔

برطانوی خبر رساں ادارے رائیٹرز نے بھی اس دورے کی تصدیق کی ہے۔ذرائع نے بتایا کہ ایک سوڈانی اہلکار دوطرفہ تعلقات کو مضبوط کرنے کی کوشش میں اس وقت تل ابیب کا دورہ کر رہے ہیں۔ وہ ہفتے کے شروع میں اسرائیل پہنچے تھے۔اس تناظر میں ذرائع نے بتایا کہ ایک اعلیٰ فوجی افسر کی سربراہی میں ایک وفد نے اسرائیل کا خفیہ دورہ کیا جہاں اس نے اسرائیلی فوج اور سکیورٹی کے حکام سے ملاقات کی۔

ذرائع نے بتایا کہ سوڈانی وفد نے اسرائیلی وفد کے خرطوم پہنچنے سے پہلے یہ دورہ کیا ہے۔۔ذرائع کے مطابق ایسے دوطرفہ دوروں کے ذریعے دونوں ممالک کے درمیان تعلقات کو مضبوط بنانا اور تعاون کے ممکنہ پہلوو¿ں کو آگے بڑھانا ہے۔تاہم اسرائیلی حکومت یا سوڈانی افواج کی جانب سے اس دورے کی تصدیق نہیں ہو سکی۔دونوں ممالک نے 2020 میں دوطرفہ اقتصادی اور تجارتی تعلقات شروع کرکے تعلقات کو معمول پر لانے کے لیے تیاری کا اعلان کیا تھا۔تاہم سوڈان میں بعض سیاسی حلقوں کی طرف سے فوج کے اس اقدام پرتنقید کی گئی تھی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *