Kartarpur reunites another family separated during Partitionتصویر سوشل میڈیا

اسلام آباد: 1947میںتقسیم ہندنے نہ صرف سرحدیں کھینچ دیں بلکہ کئی خاندانوں کو توڑ دیا۔ لیکن تقسیم میں الگ ہونے والے خاندان اب کرتار پور راہداری کے ذریعے متحد ہو رہے ہیں۔ تازہ ترین معاملے میں بھائی بہن کی علیحدگی کے 75 سال بعد وہ پہلی بار کرتار پور راہداری پر ملے، جب برسوں تک ان کے جذبات کو دبایا گیا۔پاکستانی صحافی غلام عباس شاہ نے اس سے متعلق ایک ویڈیو شیئر کی ہے۔ اس میں ہندوستانی پنجاب کے رہائشی امرجیت سنگھ نے اپنی بہن کلثوم سے کرتار پور صاحب گوردوارہ میں ملاقات کی۔

دونوں پاکستان کی تقسیم کے 75 سال بعد ایک دوسرے سے ملے تھے۔ دونوں بہن بھائیوں نے ایک دوسرے کو دیکھا تو اپنے آنسو نہ روک سکے۔ دونوں بچپن سے لے کر کبھی نہیں ملے۔ جب وہ بوڑھے ہو گئے تو انہوں نے ایک دوسرے کو دیکھا۔کلثوم اختر کا کہنا ہے کہ ان کا خاندان 1947 میں جالندھر سے ہجرت کر کے پاکستان آیا تھا لیکن ان کے ایک بھائی اور بہن پنجاب میں ہی رہ گئے۔ وہ تقسیم ہند کے بعد پاکستان میں پیدا ہوئے۔

ان کی ماں ہندوستان میں رہنے والے اپنے بہن بھائیوں کے بارے میں بات کرتے ہوئے ہمیشہ روتی رہتی تھی۔ کلثوم کا کہنا ہے کہ وہ اپنے بھائی سے ملنے کی امید کھو چکی تھی لیکن چند سال قبل ان کے والد نے پاکستان آنے والے ایک دوست سے بات چیت میں اپنے بچوں کا ذکر کیا تھا جس کے بعد ان کا سراغ لگایا جا سکتا تھا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *