Taliban fire into air to disperse women's rally backing Iran protestsتصویر سوشل میڈیا

کابل: طالبان کے سلامتی دستوں نے ایران میں اپنے والدین کے ساتھ بے حجاب گھوم رہی ایک لڑکی کی اخلاقی پولس کی حراست میں موت کے خلاف افغان دارالخلافہ میں واقع ایرانی سفار خانے کے سامنے مظاہرہ کرنے والی افغان خواتین کو منتشر کرنے کے لیے ہوامیں گولیاں چلائیں۔تقریباً 25 افغان خواتین نے عورت‘ زندگی‘ آزادی‘ کوجیسے ایران میں لگائے جانے والے نعرے دہراتے ہوئے ایرانی سفارت خانے کے باہر احتجاجی مظاہرہ کر رہی تھیں۔

واضح ہو کہ ایران میں 22 سالہ مہسا امینی کی اخلاقی پولیس کی حراست میں ہلاکت کے بعد گزشتہ دو ہفتوں سے پرتشدد مظاہرے جاری ہیں۔جس میں درجنوں افراد ہلاک اور سیکڑوں گرفتار ہو چکے ہیں۔ایک خاتون کارکن نے اے ایف پی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ کابل میں آج کو یہ مظاہرہ اس امرکی علامت ہے کہ دنیا میں خواتین تنہا نہیں ہیں ور وہ بین الاقوامی برادری سے اپنے حقوق دلوانے کا مطالبہ کر رہی ہیں۔یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ دونوں پڑوسی ملکوں افغانستان اور ایران میں شدت پسند اسلامی حکومتیں قائم ہیں جو خواتین کے ساطر لباس ا ور پردے کے معاملے میں نہایت سخت ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *